ایک سوچ

کافی دنوں سے کچھ لکھا نہیں  تھا۔ جب سوچا کہ کیا لکھا جائے تو  کچھ سمجھ نہیں آیا۔  ایسے میں میں نے اپنی ناران کی سیر سے ایک  تصویر منتخب کی اور کوئی منظر بنانے کی کوشش کرنے لگا۔
49
اپنی آنکھیں بند کریں اور یہ تصور کریں کہ آپ  کسی حسین وادی میں  ہوں۔ آپ کے اردگرد آسمان کو چھوتے پہاڑ ہوں۔  اور آپ کے ساتھ سے کوئی  دریا بہہ رہا ہو۔ ہر طرف سبزہ ہی  سبزہ ہو۔ٹھنڈی ہوا  آپ کے جسم کو چھوتے ہی آپ کی ساری پریشانیوں کو بھلا دے۔   آپ کے ہاتھ میں قلم اور ڈائری  ہو اور آپ  اپنے احساسات کو الفاظ کی شکل دینے میں  مصروف ہوں۔

Advertisements

Leave a Reply

Please log in using one of these methods to post your comment:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s